57

ملک بھر میں یوم پاکستان جوش و خروش سے منایا جارہا ہے، پریڈ گراؤنڈ میں شاندار تقریب

ملک بھر میں یوم پاکستان آج ملی جوش وجذبے کے ساتھ منایا جارہاہے۔ دن کا شایان شان آغاز توپوں کی سلامی سے کیا گیا۔ مساجد میں وطن عزیز کی سلامتی اور خوشحالی کے لیے خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔

دن کے آغاز پر وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے گن کلب میں اکتیس اور چاروں صوبائی دارالحکومتوں میں اکیس، اکیس توپوں کی سلامی پیش کی گئی تو گولوں کی گھن گرج سے فضا گونج اٹھی۔

شہر شہر وطن کی ترقی ، خوشحالی، سلامتی و استحکام کے لیے خصوصی دعائیں مانگی گئیں اور ملک دشمنوں کے خلاف سیسہ پلائی دیوار بننے کا پختہ عزم کیا گیا۔

لاہور کے محفوظ شہید گیریژن میں 21 توپوں کی سلامی کے ساتھ پاک فوج کے چاک و چوبند دستوں نے نعرہ تکبیر، اللہ اکبر اور پاکستان زندہ باد کے فلگ شگاف نعرے لگائے۔

پشاور کےکرنل شیر خان گراؤنڈ میں 21 توپوں کی سلامی دی گئی۔ پاکستان زندہ باد کے نعرے بھی لگائے گئے۔

شکر پڑیاں پریڈ گراؤنڈ میں مسلح افواج نے شاندار پریڈ کا مظاہرہ کیا۔ تینوں مسلح افواج کے دفاعی سازو سامان کی نمائش بھی کی جائے گی جن میں بیلسٹک اور کروز میزائل ، توپوں ، ٹینکس سمیت روایتی ہتھیار سب شامل ہیں۔

یوم پاکستان پریڈ کے موقع پرملائشیا کے وزیراعظم ڈاکٹر مہاتیر محمد مہمان خصوصی ہیں۔ اس کے علاوہ آذر بائیجان کے وزیر دفاع، بحرین فوج کے سربراہ، سلطنت آف عمان کے سرکاری عہدیداران بھی شریک ہوئے۔

صدر مملکت عارف علوی نے پریڈ سے خطاب کیا جبکہ وزیراعظم عمران خان، مسلح افواج کی قیادت بھی سلامی کے چبوترے پرموجود رہی۔

چین، ترکی آذربائیجان، بحرین، سری لنکا اور سعودی عرب کے دستوں نے بھی پریڈ میں حصہ لیا جبکہ پاک افوج کے ساتھ ساتھ آذربائیجان، بحرین، سعودی عرب اورسری لنکا کے پیراٹروپرز نے بھی فری فال جمپ کا مظاہرہ کیا ۔ ترکی کے ایف 16 اور چین کے جے 10 طیاروں نے فضا میں کرتب دکھائے۔

آئی ایس پی آر نے 72 ویں یوم پاکستان کی مناسبت سے قومی نغمہ جاری کیا جبکہ ہر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی شخصیات کے پرومو بھی بنائے گئے۔

سیکیورٹی انتظامات
پاکستان ڈے پریڈ کے موقع پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔اسلام آباد میں 2 ہزار 36 پولیس اہلکار تعینات ہیں۔ 4 ایس پیز پولیس فورس کی سربراہی کریں گے۔ سیکورٹی ڈویژن کے 1 ہزار661 اہلکاروں کے علاوہ پولیس ہیڈکوارٹرز اور رینجرز بھی سیکیورٹی کے فرائض سرانجام دیں گے۔ 614 پولیس اہلکار اسٹینڈ بائی رکھے جائیں گے۔ ضلع بھر میں 74 پٹرولنگ گاڑیاں بھی فرائض سرانجام دیں گی۔

ٹریفک پلان
راولپنڈی ٹریفک پولیس کی جانب سے جاری کردہ پلان کے تحت 23 مارچ کی صبح سے پروگرام کے اختتام تک فیض آباد سے راولپنڈی اور اسلام آباد جانے والا ٹریفک مکمل طور پر بند رہے گا۔ راولپنڈی مری روڈ سے اسلام آباد جانے والا ٹریفک ڈبل روڈ چوک ڈائیورشن پوائنٹ سے براستہ اسٹیڈیم روڈ سے 9 ایونیو اسلام آباد جائے گا، کرال چوک سے اسلام آباد آنے والا ٹریفک کھنہ پل سروس روڈ سے ہوتے ہوئے چونگی نمبر 8، بند کھنہ روڈ، صادق آباد، مری روڈ سے اسٹیڈیم روڈ 9 ایونیو سے اسلام آباد جائے گا۔

نائنتھ ایونیو سے راولپنڈی داخل ہونے والا ٹریفک اسٹیڈیم روڈ کی بجائے آئی جے پی روڈ استعمال کرتے ہوئے ناکہ کٹاریاں، پنڈوڑہ چونگی اور ناکہ کیرج فیکٹری سے ہوتے ہوئے شہر میں داخل ہو گا۔

مظفر آباد سے براستہ مری آنے والے ٹریفک کو لوئر ٹوپہ، ایبٹ آباد سے آنے والے ٹریفک کو باڑیاں اور مری سے آنے والے ٹریفک کو سترہ میل ٹول پلازہ کے مقام پر روکا جائے گا، راولپنڈی میں موجود پبلک ٹرانسپورٹ اڈے بند رہیں گے۔

دوپہر دو بجے تک جڑواں شہروں میں ہیوی ٹریفک کا داخلہ بند رہے گا۔ موبائل فون سروس اور میٹرو بس سروس بھی معطل رہے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں